چوتھا بعد

‎میں تمھارے ساتھ
‎وہ آنسو رو سکتی ہوں

‎وہ آہیں کراہ سکتی ہوں

‎جو روح کے آئینے میں

‎درِ جسم سے جھانکتی ہیں

‎جو خاموش تازیانہ ہیں

‎ہجر کا ہرجانہ ہیں

‎میں تمھارے لیے

‎وہ حاشیے مٹا سکتی ہوں

‎وہ گرہیں کھول سکتی ہوں

‎جو وقت نے راستوں پر

‎نوکِ جبر سے کھینچیں

‎جو فیصلوں کے نطق میں

‎لکھی گئیں

‎جو درد رہیں جو دار ہوئیں

‎میں تمھارے ساتھ حجاب بانٹ سکتی ہوں

‎اور ظاہر جھٹلا سکتی ہوں

‎ میں تمھاری ہر حد تک جا سکتی ہوں 

‎میں تمھیں اپنا مرکز بنا سکتی ہوں

‎میں تمھارے لیے پھر سے

‎وجود پا سکتی ہوں

اور چاہو تو عدم تک آ سکتی ہوں 


Demarcation 

‪I’m living with you, in separation, in exile‬


‪Every breath is a citizen of your love‬

‪Every gaze, a seeker of your glimpse‬

‪I am a wandering symbol of your permanence

‪You’re the only constant, ‬

‪And I’m in every variable, fulfilling your equations‬

‪Yet, My darling, the paths aren’t going to unite‬

‪Parallels wouldn’t embrace the peace of confluence

‪This exile is marked on bones & flesh;‬

‪A poetic imprint on each other’s soul,‬

‪A collection of frozen sorrows,‬

‪And recollection of tropical sensual laughters‬